15 سالہ بیٹی نے پڑھائی کیلیے ڈانٹنے پر ماں کو بیدردی سے قتل کردیا

ممبئی: بھارت میں میڈیکل میں داخلہ ٹیسٹ کی تیاری کے لیے ڈانٹنے پر ماں کو قتل کرکے اسے خودکشی کا رنگ دینے کی کوشش کرنے والی 15 سالہ بیٹی کو گرفتار کرلیا گیا۔
بھارتی میڈیا کے مطابق ممبئی پولیس کو 30 جولائی کو 41 سالہ خاتون کی لاش ان کے کمرے سے ملی تھی۔ لاش کی گردن میں کراٹے کی بیلٹ لپٹی ہوئی تھی اور گلے پر بیلٹ کسنے کے نشانات بھی تھے۔ جس سے پہلی نظر میں یہ خودکشی کا کیس لگا تھا تاہم اب پولیس نے موت کا معمہ حل کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ بیٹی نے میڈیکل کالج میں داخلے کی تیاری کے لیے NEET میں ایڈمیشن لیا تھا تاہم ٹھیک سے تیاری نہیں کر رہی تھی جس پر ماں پڑھائی کے لیے زور دیتی تھیں اور واردات والے دن بھی بیٹی کو پڑھائی نہ کرنے پر خوب ڈانٹا اور سخت سست کہا تھا۔

ماں کی ڈانٹ پر بیٹی غصے میں آگئی اور دونوں گتھم گتھا ہوگئے۔ ماں دھکا لگنے کی وجہ سے زمین پر گر گئیں اور سر میں چوٹ لگنے سے وہ ہلاک ہوگئیں۔ بیٹی نے لاش کو بیڈ روم لے جا کر دروازہ پش بٹن کی مدد سے بند کردیا۔

ماں کی لاش کو کمرے میں بند کرنے کے بعد بیٹی نے اپنے باپ کو فون کو کیا کہ ماں نے خود کو کمرے میں بند کرلیا ہے جب کہ ماں کے فون سے اپنے ماموں کو واٹس ایپ میسیج کیا کہ میں زندگی میں ناکام ہوگئی ہے اس لیے اپنی زندگی کا خود خاتمہ کر رہی ہوں۔

باپ کسی کام کے سلسلے میں شہر سے باہر تھے اس لیے اپنے سالے کو فون کرکے حالات معلوم کرنے کا کہا جس پر سالے نے بتایا کہ بہن کا واٹس ایپ میسیج آیا ہے اور میں وہیں جا رہا ہوں۔

ماموں نے گھر پہنچ کر دروازہ توڑا تو بہن کو مردہ پایا۔ پولیس بلائی گئی جس نے کیس کو خود کشی قرار دیا تاہم پوسٹ مارٹم میں سر کے اندر گہری چوٹ آنے پر واقعے والے روز گھر میں موجود بچوں سے پوچھ گچھ کی گئی تو ماں بیٹی کے درمیان جھگڑے کا انکشاف ہوا۔

پولیس کی جانب سے سختی سے پوچھنے پر بیٹی نے پوری روداد سنادی اور اعتراف جرم کرتے ہوئے کہا کہ ماں نے غصے میں چھری اُٹھالی تھی اس لیے انھیں دھکا دیا۔ سر میں چوٹ لگنے کے باوجود وہ کراٹے بیلٹ اٹھانا چاہ رہی تھیں تاکہ مجھے پٹ سکیں۔ غصے میں اسی بیلٹ سے ماں کا گلا گھونٹ دیا۔

پولیس نے 15 سالہ ملزمہ کو حراست میں لیکر بچوں کی جیل منتقل کردیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں