فردوس عاشق اعوان کے استعفے کی اندرونی کہانی

فردوس عاشق اعوان کی معاون خصوصی کے عہدے سے استعفیٰ دینے کی اندرونی کہانی سامنے ‏آگئی۔ ‏

نمائندہ اے آروائی نیوز نے اپنے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ فردوس عاشق اور وزیراعلی آفس ‏میں تعلقات 20 جولائی سےسردمہری کاشکار تھے۔
فردوس عاشق نےسیالکوٹ الیکشن سےقبل حکومت کویقین دلانےکے لیےاستعفےکی پیشکش کی ‏تھی جب کہ سیالکوٹ کی تنظیم نے پارٹی عہدیداروں کو فردوس عاشق کی عدم دلچسپی سے آگاہ ‏کیا تھا۔

ضمنی الیکشن جیتنےکے 3دن بعد ایوان وزیراعلیٰ نے فردوس عاشق کو استعفےکی ہدایت کی تھی ‏اور 6اگست استفعیٰ لینے کا آخری دن مقرر کیا گیا۔

فردوس عاشق نےاستعفےسے پہلے وزیراعظم ہاؤس سےاسائنمنٹ لینے کی کوشش کی اور 6اگست ‏کو استعفےسے قبل 3گھنٹے تک وزیراعلی کا انتظار کرتی رہیں۔ وزیراعلیٰ سے مختصر ملاقات کے ‏بعد فردوس عاشق نے استعفیٰ دے دیا۔
فردوس عاشق نےاستعفے کے بعد وزیراعظم سے ملنے کی بھی کوشش کی تاہم وزیراعظم سے ‏ملاقات میں خاطر خواہ نتائج حاصل نہ کرسکیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں