ایک ہی ماسک بار بار استعمال کرنے سے کیا ہو سکتا ہے

اگر آپ ایک ہی فیس ماسک بار بار استعمال کریں گے تو کیا ہوگا؟ کیا آپ کو اندازہ ہے کہ آپ کئی قسم کی بیماریوں میں مبتلا ہو سکتے ہیں؟

ماہرین کہتے ہیں کہ وہ افراد جنھوں نے کرونا وائرس کے خلاف ویکسین لگوا لی ہے، انھیں بھی انفیکشن کے حوالے سے چوکنا رہنے کی ضرورت ہے، اور انھیں اپنی ویکسینیشن کی تمام ڈوزز لگوانی چاہیئں، تاکہ اس بیماری سے سب لوگ یکساں طور پر بچ سکیں۔

ماسک کے استعمال کے حوالے سے بھی ماہرین مسلسل اہم ہدایات دیتے رہے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ اگر دھوئے بغیر ماسک بار بار استعمال ہو، تو آپ جِلد کی کن بیماریوں میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔

الرجی: ماہرین کا کہنا ہے کہ زیادہ دیر تک ایک ہی ماسک لگانے سے آپ جِلد کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو سکتے ہیں، ان میں الرجی بھی شامل ہے، یعنی چہرے کی جلد میں خارش وغیرہ شروع ہو سکتی ہے یا آنکھوں سے یا ناک سے پانی بہنے کی شکایت بھی ہو سکتی ہے۔

ماسکن: Maskne کو جلد کی عام بیماریوں میں شمار کیا جاتا ہے، ایک ہی ماسک کے بار بار استعمال سے آپ کی جِلد جلن اور کیل مہاسے جیسے مسائل کا شکار ہو سکتی ہے۔

انفیکشن: ایک ہی ماسک زیادہ دنوں تک استعمال کرنے سے انفیکشن ہونے کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔

بلیک فنگس: ڈاکٹرز نے خبردار کیا ہے کہ ماسک بلیک فنگس ہونے کی وجہ بھی بن سکتا ہے۔

اس لیے ماہرین کا کہنا ہے کہ سرجیکل ماسک کو ایک بار استعمال کرنے کہ بعد اسے ضائع کر دیا جائے، جب کہ روئی یا کپڑے سے بنائے ہوئے ماسک کو دھوکر پھر سے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں